محمد رفیق طاہر

گانے کی طرز پر نعت یا حمد یا نظم پڑھنے کا حکم

فتوى
گانے کی طرز پر نعت یا حمد یا نظم پڑھنے کا حکم
341 زائر
مؤرخہ4-08-1442ھ بمطابق: 18-03-2021ء
غير معروف
محمد رفیق طاہر
السؤال كامل
گانے کی طرز میں کوئی نعت یا حمد پڑھنے کی ان تین صورتوں کا کیا حکم ہے؟ ۱. گانا پرانا ہو. لوگوں کے ذہن سے نکل چکا ہو ۲. گانا اسی دور کا ہو.. اور مشہور بھی ہو.. ۳. ملی نغمہ ہو ان تینوں صورتوں میں گانے کی طرز پر نعتیہ یا حمدیہ اشعار پڑھنا کیسا ہے؟؟
جواب السؤال

گانے یا کفار ومشرکین کے جملوں کے وزن اور طرز پر حمد ونعت پڑھنا یا اشعار وجملے کہنا شرعا جائز ہے , کوئی حرج نہیں

غزوہ احد کے موقع پر کفار نے کہا

"أُعْلُ هُبَلْ، أُعْلُ هُبَلْ"

(ھبل کی جے ہو)

تو رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم نے فرمایا انہیں جواب دو

"اللَّهُ أَعْلَى وَأَجَلُّ"

(اللہ سب سے اعلى اور جلیل القدر ہے)

مشرکین نے کہا

"إِنَّ لَنَا العُزَّى وَلاَ عُزَّى لَكُمْ"

( ہمارا تو عزى جبکہ تمہارے پاس کوئی عزى نہیں)

تو رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم نے فرمایا انہیں جواب دو

"اللَّهُ مَوْلاَنَا، وَلاَ مَوْلَى لَكُمْ"

( اللہ ہمارا مولى ہے اور تمہارا کوئی مولى نہیں)

[صحیح بخاری : 3039]

اب یہ الفاظ آپس میں ملتے جلتے اور ایک ہی وزن پر ہیں۔ رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم نے کفار کے الفاظ کے ہم وزن الفاظ میں انہیں جواب دیا ہےجنکی طرز ایک ہی بنتی ہے۔


جواب السؤال صوتي
   طباعة 
متعلقہ لنکس
فتوى گزشتہ
فتاوى متشابہہ فتوى آئندہ
جديد المواد

مقتدی کا سمع اللہ لمن حمدہ کہنا

2036 مؤرخہ13-09-1441ھ بمطابق: 5-05-2020ء

نمازوں کی رکعات

1853 مؤرخہ11-09-1441ھ بمطابق: 4-05-2020ء

سجدہ سہو کے مسائل

1337 مؤرخہ10-09-1441ھ بمطابق: 3-05-2020ء
البحث
القائمة البريدية